صفحہ اول انٹرٹینمنٹ نواز الدین صدیقی کے سامنے ساڑھی اتارنے کا کہا گیا: اداکارہ چترگندا سنگھ

نواز الدین صدیقی کے سامنے ساڑھی اتارنے کا کہا گیا: اداکارہ چترگندا سنگھ

53 second read
0
0
Share on Pinterest
Share with your friends










Submit

بولی وڈ میں جاری ‘می ٹو’ مہم کے تحت جہاں اداکاراؤں اور اداکاروں نے اپنے ساتھ ہونے والے جنسی ہراساں کے واقعات کو بیان کیا ہے، وہیں اب شوبز انڈسٹری سے وابستہ افراد دیگر نامناسب رویوں پر بھی بات کرتے نظر آ رہے ہیں۔

‘صاحب بیوی اور گینگسٹر تھری’ سمیت دیگر بولڈ فلموں میں اداکاری کے جوہر دکھانے والی 42 سالہ اداکارہ چترگندا سنگھ نے انکشاف کیا ہے کہ انہیں 2017 میں ریلیز ہونے والی فلم ‘بابو موشی بندوق باز’ کی شوٹنگ کے دوران نیم عریاں سین شوٹ کروانے کے لیے کہا گیا۔

چترگندا سنگھ کے مطابق فلم کے ہدایت کار کشن نانڈے نے ان سے کہا کہ وہ نوازالدین صدیقی کے سامنے ایک سین شوٹ کروانے کے لیے اپنی ساڑھی اتاردیں۔

ڈی این اے انڈیا کی رپورٹ کے مطابق اداکارہ نے بتایا کہ انہیں سمجھ نہیں آیا کہ آخر ہدایت کار نے ان سے یہ مطالبہ اس وقت کیوں کیا، جب فلم کی کافی شوٹنگ مکمل ہوچکی تھی۔

چترگندا سنگھ نے دعویٰ کیا کہ ہدایت کار نے انہیں ساتھی اداکار کے ساتھ ایک سین کرنے کے لیے نہ صرف ساڑھی اتارنے کے لیے کہا، بلکہ یہ بھی کہا کہ وہ اپنے دونوں پاؤں ایک ہی طرف کرکے انہیں رگڑے’۔

ڈی این انڈیا نے اپنی رپورٹ میں ایک اور نشریاتی ادارے کی خبر کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ چترگندا سنگھ نے الزام عائد کیا ہے کہ انہیں اس طرح کا سین شوٹ کروانے کے لیے کہنے کے بعد بھی نوازالدین صدیقی نے ان کی حمایت نہیں کی۔

چترگندا سنگھ نے دعویٰ کیا کہ نامناسب سین شوٹ کروانے کے مطالبے کا سننے کے باوجود نوازالدین صدیقی نے ان کے حق میں بات نہیں کی۔

خیال رہے کہ ‘بابو موشی بندوق باز’ کے حوالے سے پہلے کہ اطلاعات تھیں کہ چترگندا سنگھ نے نوازالدین صدیقی کے ساتھ رومانوی مناظر شوٹ کروانے سے انکار کیا تھا، جس وجہ سے انہیں فلم کاسٹ نہیں کیا گیا تھا۔

بعد ازاں یہ خبریں بھی سامنے آئیں کہ چترگندا سنگھ نے محض اس لیے نوازالدین صدیقی کے ساتھ رومانوی مناظر شوٹ کروانے سے انکار کیا،کیوں کہ اداکار کی رنگت انتہائی سانولی تھی اور اداکارہ خود کو ان سے زیادہ بہتر سمجھتی تھیں۔

تاہم بعد ازاں ایسی رپورٹس بھی آئیں کہ چترگندا سنگھ سے نیم عریاں مناظر شوٹ کروانے سے انکار کیا تھا،جس وجہ سے انہیں فلم میں کاسٹ نہیں کیا گیا۔

لیکن اب چترگندا سنگھ کا کہنا ہے کہ ان سے ہدایت کار نے اضافی نیم عریاں سین شوٹ کروانے کا مطالبہ کیا، جس پر انہوں نے انکار کیا۔ چترگندا سنگھ کے انکار کے بعد اسی فلم میں نوازالدین صدیقی کے ساتھ نئی اداکارہ بدیتا بیگ کو کاسٹ کیا گیا تھا۔

اس فلم کے کئی مناظر پر بھارت کے فلم سینسر بورڈ نے بھی اعتراض کیا تھا اور کہا تھا کہ اس فلم سے کم سے کم 48 مناظر خارج کیے جائیں۔

اس فلم میں نوازالدین صدیقی نے ایک گینگسٹر کا کردار ادا کیا تھا، فلم نے باکس آفس پر 20 کروڑ روپے کی کمائی کی تھی۔

چترگندا سنگھ نے اگرچہ بابو موشی بندوق باز میں کام نہیں کیا، تاہم اب تک انہوں نے 15 کے قریب فلموں میں اداکاری کے جوہر دکھائے ہیں۔

ان کی پہلی فلم ‘ہزاروں خواہشیں ایسی’ 2003 میں ریلیز ہوئی، ان کی دیگر فلموں میں ‘ یہ سالی زندگی، دیسی بوائز، انکار، آئی، می اور میں، گبر از بیک، منا مائیکل، سورما، صاحب بیوی اور گینگسٹر 3‘ شامل ہیں۔

جلد ہی ان کی فلم ‘بازار’ بھی ریلیز ہوگی، جس میں وہ سیف علی خان کے ساتھ ایکشن میں دکھائی دیں گی۔

Share on Pinterest
Share with your friends










Submit
مزید مماثل خبریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Check Also

بولی وڈ اداکاراؤں کو پرکشش بنانے میں‘کراچی والا‘ کا ہاتھ

ممبئی: شوبز انڈسٹری میں جہاں اداکاراؤں کو اپنے کردار کی مناسبت سے کبھی خود کو ڈراؤنا بنانا…