More share buttons
Share with your friends










Submit
Featuredخیبر پختونخواہ

عمران خان اب بند گلی میں چلاگیا ہے، جہاں سے نکلنے کا کوئی راستہ نہیں

عمران خان استعفوں کی دھمکی دیتا ہے، اس نے استعفے پہلے بھی دیے تھے مگر واپس آیا تھا

Share on Pinterest
Share with your friends










Submit

 کچھ لوگ سیاسی افراتفری پھیلانے کی کوشش کررہے ہیں، جس کیوجہ سے معاشی عدم استحکام آیا۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ ملک میں سازش کا کوئی نام ہے تو وہ عمران خان ہے جواب بند گلی میں چلا گیا ہے۔

کوہستان میں عظمت اسلام و استحکام پاکستان کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ 2018 میں دھاندلی سے جعلی حکومت ملک پر مسلط کی گئی، نیب کے ذریعے سیاستدانوں کے خلاف مقدمات بنائے گئے،عمران کہتا ہے سازش ہوئی، سازش نہیں ہوئی ڈنکے کی چوٹ پر نکالا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے عمران خان کو گریبان سے پکڑ کر اقتدار سے باہر کیا، ملک میں سازش کا کوئی نام ہے تو وہ عمران خان ہے، جس نے دفاعی قوت کو بھی تقسیم کرنے کی سازش کی، وہ کہتا تھا اسلام آباد آؤں گا، آئے کیوں نہیں، تم اسلام آباد آکر تو دکھاؤ، ایک گولی لگنے کے بعد ایسا بھاگا گھر میں بھی بلٹ پروف شیشے لگارہا ہے۔
اُن کا کہنا تھا کہ ’مجھ پر 3 خودکش حملے ہوئے مگر آج بھی عوام کے سامنے کھڑا ہوں، عمران خان کے جلسے میں درجہ چہارم کے سرکاری ملازمین کو لایا گیا۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ عمران خان اب بند گلی میں چلاگیا ہے، جہاں سے نکلنے کا کوئی راستہ نہیں، عمران خان استعفوں کی دھمکی دیتا ہے، اس نے استعفے پہلے بھی دیے تھے مگر واپس آیا تھا۔

جے یو آئی کے سربراہ کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی حکومت کو انتقام سے فرصت نہیں ملی اس لیے معیشت بیٹھ گئی، ملکی معیشت کی بہتری کے لئے پی ٹی آئی حکومت کو ہٹانا ضروری تھا، کچھ لوگ سیاسی افراتفری پھیلانے کی کوشش کررہے ہیں، جس کیوجہ سے معاشی عدم استحکام آیا۔

 

Share on Pinterest
Share with your friends










Submit
Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close