More share buttons
Share with your friends










Submit
Featuredتجارت

ایل سیز جلد کھول دیئے جائیں گے،33 ہزار ایل سیز کے کیسز کلیئر کیے ہیں

Share on Pinterest
Share with your friends










Submit

گورنر اسٹیٹ بینک جمیل احمد کا کہنا ہے کہ ڈالرز دیکھ کر امپورٹ کا فیصلہ کرتے ہیں، جلد ایل سیز کھول دیں گے۔ 33 ہزار ایل سیز کے کیسز بھی کلیئر کردیئے ہیں۔

فیڈریشن آف پاکستان چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریز (ایف پی سی سی آئی) میں آج بروز بدھ 18 جنوری کو خطاب کرتے ہوئے گورنر اسیٹیٹ بینک جمیل احمد کا کہنا تھا ہمیں کاروبار کو سہولت دینی ہے، کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کے سبب ہمیں کچھ اقدامات کرنے پڑے۔

انہوں نے کہا کہ ہماری امپورٹس کم ہوئی ہیں، 33 ہزار ایل سیز کے کیسز کلیئر کیے ہیں، ایل سی کو جانچنے میں کافی وقت لگتا ہے، ایل سیز جلد کھول دیں گے۔ خوراک، ادویات اور تیل کو ترجیح میں رکھیں، ہم نے ایکسپورٹ کے لیے امپورٹ مال کو ترجیح دی ہے، زرعی شعبے کے لیے امپورٹ میں سہولت پیدا کر رہے ہیں، مزید ڈالرز آتے ہی مزید امپورٹس کو سہولت دینے کا منصوبہ ہے، ڈالرز کو دیکھتے ہوئے ہی امپورٹ کا فیصلہ کرنا ہوتا ہے۔

گورنر اسٹیٹ بینک کا کہنا تھا اگر امپورٹرز ڈالر کا بندوبست کرتے ہیں تو ہمیں اعتراض نہیں ہوگا، ایکسپورٹرز کو اپنے ڈالرز سے امپورٹ کا بندوبست کرنے کی اجازت ہے۔ اگلے ہفتےسے ملک میں ڈالرز آنا شروع ہو جائیں گے، اب زرمبادلہ ذخائر بڑھنا شروع ہوں گے، کچھ مال بلا اجازت امپورٹ کے سبب بھی پورٹ پر پھنسا ہوا ہے، شرح سود کے بارے میں فی الحال کچھ نہیں کہہ سکتا۔

جمیل احمد نے یہ بھی کہا کہ بینکس سے کہا ہے کہ فوڈ آئٹمز، فارماسیوٹیکل، میڈیکل امپورٹس کو فرسٹ کیٹیگری میں رکھیں، ہمیں کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کے باعث اقدامات کرنے پڑے ہیں، امپورٹرز کو سہولتیں دی جائیں گی۔

انہوں نے بتایا کہ اسٹیٹ بینک نے تمام بینکوں کو خوراک، ادویات اور تیل کو ترجیحی فہرست میں رکھنے کی ہدایت کردی ہے۔ امپورٹرز اپنے بزنس کے لئے ڈالرز کا خود بندوبست کریں تو مرکزی بینک کو کوئی اعتراض نہیں۔

Share on Pinterest
Share with your friends










Submit
Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close