More share buttons
Share with your friends










Submit
Featuredپنجاب

الیکشن کمیشن نے آئین کے تحت رائے دی، مریم نواز

Share on Pinterest
Share with your friends










Submit

  لاہور : قوم کو سمجھ آگئی ہے کہ مافیا کیا ہوتے ہیں، ادارے مرضی کے فیصلے کریں تو اچھے ہیں۔

مریم نواز نے کہا کہ سندھ، بلوچستان، کے پی میں الیکشن کمیشن ٹھیک، اسلام آباد میں غلط کیسے؟

مریم نواز نے کہا ہے کہ الیکشن کمیشن نے آئین کے تحت رائے دی، قوم کو سمجھ آگئی ہے کہ مافیا کیا ہوتے ہیں۔

بلوچستان، سندھ اور خیبرپختونخوا میں جیتیں تو الیکشن کمیشن ٹھیک ہے، اسلام آباد میں ایک نشست ہار جائیں تو انتخاب ٹھیک نہیں ہوا اور الیکشن کمیشن غلط، یہ کیسے؟

انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے آئین کے تحت رائے دی، ن لیگ عوام کی جیب اور ووٹوں پر ڈاکا ڈالنے کی اجازت نہیں دے گی۔

مریم نواز نے مزید کہا کہ پوری قوم کو سمجھ آگئی ہے کہ مافیا کیا ہوتے ہیں، ادارے مرضی کے فیصلے کریں تو اچھے ہیں۔

اُن کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن نے سپریم کورٹ کے اندر جو رائے دی وہ ذاتی نہیں تھی، الیکشن کمیشن نے سپریم کورٹ میں آئینی پوزیشن لی تھی، عدالت عظمیٰ نے وہی پوزیشن تسلیم کی جو الیکشن کمیشن نے لی، آئین میں ترمیم کا نہ ہی الیکشن کمیشن اور نہ ہی سپریم کورٹ کو اختیار ہے۔

ن لیگی نائب صدر نے یہ بھی کہا کہ بلوچستان اور خیبرپختونخوا میں اربوں پتی لوگوں کو ٹکٹس دیے گئے، اب اداروں کو بھی معلوم ہے کہ ان کی تضحیک کرنے والے کون لوگ ہیں، جب آپ کے غلط کام کو غلط کہیں تو ادارے برے۔

انہوں نے کہا کہ قومی اسمبلی کا اجلاس آئین کی شق نائینٹی ون سیون کے تحت بلایا گیا ہے، شق یہ کہتی ہے کہ وزیراعظم ایوان کی اکثریت کا اعتماد کھو چکے ہیں، اس لئے انہیں اعتماد کا ووٹ لینا چاہئے۔

مریم نواز نے کہا کہ ضمنی انتخاب میں جو بات قوم کو سمجھ آ گئی تھی وہ صدر کو کل سمجھ آئی ہے، صدر کو مبارکباد دیتی ہوں کہ انھیں دیر سے ہی لیکن سمجھ آ گئی۔

ان کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن کے آزاد کشمیر میں مینڈیٹ کو چرانے کی کوشش کی گئی تو آپ کا بہت برا حال ہوگا، راجا فاروق حیدر اور ان کی پارلیمانی پارٹی آج بھی متحد اور ساتھ ہے۔

آزاد کشمیر میں گلگت بلتستان کی طرح مینڈیٹ چرانے کی کوشش کی گئی تو ڈسکہ والا حال ہو گا، عمران خان آئیں عوام کی عدالت میں، لوگ آپ کا انتظار کررہے ہیں۔

 

Share on Pinterest
Share with your friends










Submit
Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close