More share buttons
Share with your friends










Submit
سندھ

پاکستانی وفود کے غاصب صہیونی ریاستی اسرائیل کے دوروں کے خلاف احتجاجی ریلی

اسرائیل کا ناپاک وجود عالم اسلام کے قلب میں خنجر کی طرح گھونپا گیا ہے

Share on Pinterest
Share with your friends










Submit

کراچی: پاکستانی وفد کی جانب سے اسرائیل کا دورہ بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح کی پالیسی سے کھلی بغاوت ہے

امامیہ اسٹودنٹس آرگنائزیشن پاکستان کی جانب سے صہیونی ریاست نامنظور اسرائیل ریلی نمائش تا کراچی پریس کلب تک نکالی گئی۔

ریلی میں بچوں اور خواتین سمیت سمیت مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد نے شرکت کی۔

احتجاجی ریلی سے مجلس وحدت کے رہنما مولانا غلام عباس مرکزی نائب امیر جماعت اسلامی اسد اللہ بھٹو، جمعیت علمائے پاکستان کے رہنما علامہ قاضی احمد نورانی صدیقی، آئی ایس او کے صدر اور فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کے رہنماء ڈاکٹر صابر ابو مریم نے خطاب کیا۔

آئی ایس او کے صدر کا کہنا تھا کہ پارلیمنٹ قانون پاس کرے کہ اسرائیل کے تعلقات کی بحالی کی بات کرنیوالا قومی مجرم ہے، مسلسل پے در پے پاکستانی وفود کی اسرائیل یاترا حکومت کی نا اہلی اور حکومت کے اسرائیل سے خفیہ روابط کی نشاندہی کرتا ہے، پاکستانی وفد کی جانب سے اسرائیل کا دورہ بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح کی پالیسی سے کھلی بغاوت ہے۔

مولانا قاضی احمد نورانی نے کہا کہ حکومت اسرائیل کا دورہ کرنیوالےپاکستانیوں کو فوری گرفتار کرے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے اہم عہدے پر کام کرنے والے نسیم اشرف اور مشہور معروف ٹی وی چینلز سے تعلق رکھنے والے صحافیوں کو اسرائیل دورہ پاکستان کی سالمیت کو نقصان پہنچانے اور پاکستان کے نظریاتی استحکام کے خلاف سازش کا حصہ ہے، حکومت ایسے تمام شہریوں کو گرفتار کرے اور ان کے خلاف سخت کاروائی عمل میں لائے جو ماضی اور حال میں غاصب صہیونی ریاست اسرائیل کا دورہ کر چکے ہیں اور فلسطینی عوام کے قاتل صدر اور عہدیداروں سے ملاقات کی ہے۔

اسد اللہ بھٹو نے کہا کہ پاکستانی صحافیوں کا اسرائیل دورہ پاکستان کی سالمیت کو نقصان پہنچانے کی سازش ہے۔

اسرائیل کا ناپاک وجود عالم اسلام کے قلب میں خنجر کی طرح گھونپا گیا ہے، ناجائز ریاست اسرائیل کے وجود میں آنے سے لیکر آج تک کی تمام تاریخ مظلومین جہاں خصوصاٙٙ مظلومین فلسطین کے خون سے بھری ہوئی ہے،اسرائیل کو وجود میں لانے کا سب سے بڑا سبب امریکہ اور برطانیہ ہیں جو آج بھی اقوام متحدہ میں اس کے حامی اور پشت پناہ ہیں،عالم اسلام کے تمام حکمرانوں پر لازم ہے کہ وہ اپنی صفوں میں اتحاد پیدا کریں اور انسانیت و مسلمانوں کے دشمن اسرائیل اسکے حواریوں سے واضح اظہار برات کریں۔

پاکستان میں جو عناصر اسرائیل کو تسلیم کرنے کی باتیں کر رہے ہیں اور مسلسل اسرائیلی دورہ کر رہے ہیں انکو لگام دینا ہوگا، جس طرح کشمیر پاکستان کی شہہ رگ حیات ہے اسی طرح فلسطین امت مسلمہ کی شہہ رگ حیات ہے، پاکستانی شہریت رکھنے والے افراد کے صہونی ریاست کے دورہ حیران کن اور باعثِ تشویش ہیں اور مملکت پاکستان کے لیے نقصان دہ ہیں۔

صابر ابو مریم کا کہنا تھا کہ جیسے کشمیر پاکستان کی شہہ رگ حیات ہے ویسے ہی فلسطین امت مسلمہ کی شہہ رگ حیات ہے۔

پاکستان میں کشمیر و فلسطین کے خلاف آواز بلند کرنے والوں کے خلاف کاروائی کا مطالبہ کیا اور کہا کہ اسرائیل کے تعلقات کی بحالی کی بات کرنیوالا قومی مجرم ہے، پاکستان کی پارلیمنٹ میں قانون پاس کیا جائے کہ جو بھی اسرائیل سے تعلقات بحالی کی بات کرے وہ قومی مجرم شمار کیا جائے گا۔ ریلی کے اختتام پر شرکاء ریلی نے امریکا، اسرائیل، ہندوستان اور برطانیہ کے پرچم نذر آتش کیے۔

Share on Pinterest
Share with your friends










Submit
Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close