More share buttons
Share with your friends










Submit
دنیا

خواتین کو عوامی مقامات پر عبایہ پہنے کی ضرورت نہیں ہے، سعودی مفتی

Share on Pinterest
Share with your friends










Submit

ریاض: سعودی عرب کے سینیئر فقہا کی کونسل کے ايک رکن شیخ عبداللہ المطلق نے کہا ہے کہ مملکت میں خواتین کو عوامی مقامات پر عبایہ پہنے کی ضرورت نہیں ہے، ان کے لیے ایسا لباس زیب تن کرلینا کافی ہے جو مناسب اور اسلامی اصولوں کے مطابق ہو۔ ٹی وی شو کے دوران گفتگو کرتے ہوئے شیخ عبداللہ المطلق نے کہا کہ خواتین مناسب لباس زیب تن کریں تو انہیں عبایہ پہننے کی ضرورت نہیں۔ خیال رہے کہ سعودی عرب میں اس وقت قانون کے مطابق عوامی مقامات پر خواتین کے لیے عبایہ پہننا لازمی ہے۔ سعودی عالم کا بیان ایک ایسے وقت میں آیا ہے جب سعودی عرب میں خواتین سے متعلق قوانین میں نرمی کا سلسلہ جاری ہے۔ عبداللہ المطلق نے مزید کہا کہ مسلم دنیا کی 90 فیصد سے زائد خواتین عبایہ نہیں پہنتی، لہٰذا ہمیں خواتین پر عبایہ پہنے کے لیے زبردستی نہیں کرنی چاہیے۔ سعودی عالم کے اس بیان پر سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر ملا جلا رد عمل دیکھنے میں آرہا ہے، بعض لوگوں نے عبداللہ المطلق کی باتوں سے اتفاق کیا ہے جبکہ بعض لوگوں نے ان کی مخالفت کی ہے۔ ٹوئٹر پر ایک صارف نے لکھا کہ ہمارے خطے کے ایک حصے میں عبایہ ثقافت کا حصہ ہے اور اب یہ سب پر لازم ہوگیا ہے، یہ مذہب کا معاملہ نہیں۔ ایک خاتون صارف نے عبداللہ المطلق کی بات سے عدم اتفاق کرتے ہوئے لکھا کہ اس معاملے پر اگر سیکڑوں فتوے آجائیں تو بھی میں عبایہ نہیں چھوڑ سکتی، میرے مرنے کے بعد ہی یہ مجھ سے جدا ہوسکتا ہے، خواتیں برائے مہربانی ان کی باتیں نہ سنیں۔

Share on Pinterest
Share with your friends










Submit
Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close