More share buttons
Share with your friends










Submit
Featuredاسلام آباد

صحافتی تنظیموں نے فواد چوہدری کے میڈیا سے متعلق بیان کو ’سازش‘ قرار دے دیا

Share on Pinterest
Share with your friends










Submit

اسلام آباد: فواد چوہدری نے سماجی روابط کی ویب سائٹ پر دعویٰ کیا تھا کہ پاکستان میڈیا کے ریونیو میں 2018 سے 2021 میں 600 فیصد اضافہ ہوا ہے ، یہ خوش آئند بات ہے لیکن سوال یہ ہے اگر معیشت مستحکم نہ ہو تو اشتہارات میں اتنا اضافہ کیسے ممکن ہے

میڈیا انڈسٹری کے اسٹیک ہولڈرز پاکستان براڈکاسٹرز ایسوسی ایشن (پی بی اے)، آل پاکستان نیوزپیر سوسائٹی (اے پی این ایس)، کونسل آف پاکستان نیوزپیپر ایڈیٹرز (سی پی این ای) نے وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری کے بیان کو ’فیک نیوز‘ اور اسے میڈیا ورکز اور مالکان کے مابین باہمی تعلقات کے خلاف سازش قرار دیا ہے۔

میڈیا مالکان سے کہا تھا کہ وہ میڈیا ورکرز کی تنخواہوں میں اضافہ کریں تا کہ انھیں بھی مہنگائی کا اثر کم لگنا شروع ہو۔

اے پی این ایس، سی پی این ای اور پی بی اے نے میڈیا ریونیو کے حوالے سے وفاقی وزیر کے بیان کو ’جعلی خبر‘ قرار دیا۔

یہ بھی پڑ ھیں : نئی خارجہ پالیسی پر تمام اسٹیک ہولڈرز کو اعتماد میں لینے پر اتفاق

میڈیا اسٹیک ہولڈرز کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی کی جانب سے ایک بیان میں واضح کیا گیا کہ فواد چوہدری کا بیان میڈیا ورکز اور مالکان کے باہمی تعلقات کے درمیان دراڑ ڈالنے کی منظم کوشش ہے۔

جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے کہا کہ قصداً غلط اعداد و شمار کا پھیلاؤ ہی دراصل فیک نیوز (جعلی خبر) ہے جس کا عملی مظاہرہ وفاقی وزیر اطلاعات کی ٹوئٹ ہے اور اگر انہوں نے اپنی لا علمی کے باعث ایسا کیا ہے تو فواد چوہدری کی اطلاعات کے مصدقہ ہونے پر ایک بڑا سوالیہ نشان ہے۔

کمیٹی نے وفاقی وزیر کی ٹوئٹ میں میں بیان کیے گئے اعدادوشمار کو پہلے سے معاشی پابندیوں میں جکڑی صحافت پر ایک اور حملہ قرار دیا-

علاوہ ازیں میڈیا کی تنظیموں نے مطالبہ کیا کہ وفاقی وزیر اطلاعات فوری طور پر دانستہ خودساختہ اعداد و شمار پر مبنی ٹوئٹ سے دسبرداری کا اعلان کریں۔

Share on Pinterest
Share with your friends










Submit
Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close